• جامعة دارالتقوی لاہور، پاکستان
  • دارالافتاء اوقات : صبح آ ٹھ تا عشاء

کیارمضان کے آخری عشرہ کی دعاسے متعلق مذکورہ حدیث درست  ہے؟

استفتاء

سید ابن طاؤس اور شیخ الصدوق دونوں حضرت جابر رضی اللہ عنہ سے روایت کرتے ہیں کہ حضرت جابر رضی اللہ عنہ نے فرمایا کہ میں رمضان کے آخری جمعہ میں حضور ﷺ کے پاس حاضر ہوا ، آپ ﷺ نے مجھے دیکھ کرارشاد فرمایا : جابر ! یہ رمضان کا آخری جمعہ ہے تمہیں اس کو مندرجہ ذیل الفاظ کہہ کر الوداع کرنا چاہیے ” اللهم لا تجعله آخِر العَهد من صيامنا إياه ، فإن جعلتَه فاجعلني مَرحُوما ولا تجعلني محروما ” یقینا جو یہ دعا پڑھے گا اس کو دو میں سے ایک چیز بدلہ میں حاصل ہوگی ۔ (۱)یا تو اگلا رمضان نصیب ہوگا ، (۲)یا اللہ تعالی کی مغفرت نصیب ہوگی ۔

ایسی کوئی حدیث ذخیرہ کتب احادیث میں موجود ہے یا  یہ من گھڑت ہے ؟کیا یہ پڑھ سکتے ہیں ؟

الجواب :بسم اللہ حامداًومصلیاً

ہمیں یہ حدیث  اہل سنت کے ذخیرہ کتب ِ احادیث میں نہیں ملی البتہ یہ حدیث اہل تشیع  کی کتب میں غیر مستند سندکے ساتھ مروی ہےلیکن چونکہ دعاکا مضمون فی نفسہ درست ہے اس لئے حدیث سمجھے بغیر اور مذکورہ فضیلت کا اعتقاد کئے بغیر  یہ دعا پڑھنا  درست ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فقط واللہ تعالی اعلم

Share This:

© Copyright 2024, All Rights Reserved