• جامعة دارالتقوی لاہور، پاکستان
  • دارالافتاء اوقات : صبح آ ٹھ تا عشاء

رمضان میں شوہر کا بیوی سے زبردستی جماع کی صورت میں بیوی کے لیے حکم

استفتاء

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ شوہر رمضان میں روزہ کی حالت میں اپنی بیوی کے ساتھ زبردستی اور مارپیٹ کر کے جماع کرے تو عورت پر قضا لازم ہو گی یا کفارہ؟

الجواب :بسم اللہ حامداًومصلیاً

مذکورہ صورت میں عورت پر صرف قضاء لازم ہو گی، کفارہ نہ ہو گا۔

من جامع عمدا في أحد السبيلين فعليه القضاء والكفارة ولا يشترط الإنزال في المحلين كذا في الهداية وعلى المرأة مثل ما على الرجل إن كانت مطاوعة وإن كانت مكرهة فعليها القضاء دون الكفارة وكذا إذا كانت مكرهة في الابتداء ثم طاوعته بعد ذلك كذا في فتاوى قاضي خان

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ فقط و اللہ تعالیٰ اعلم

Share This:

© Copyright 2024, All Rights Reserved